یہ سوچ کہ پڑھنا کہ تم نے لکھی ہے

‏اک طویل عرصہ ہے
باہمی تعلق تو
خواب جیسا لگتا ہے
زندگی گزرتی ہے
اس نے تو گزرنا ہے
ویسے وہ بھی خوش ہو گا
میں بھی مطمن سا ہوں
پر کبھی کبھی شب کو
خود سے پوچھ لیتا ہوں
کب سے جاگتا ہوں میں
نیند کیوں نہیں آتی
عباس علی

Leave a comment

Your email address will not be published. Required fields are marked *